Friday, August 19, 2011

دعا  لفظوں کی محتاج  نہیں ہوتی..کبھی کبھی یوں بھی ہوتا ہے کہ آپ کی زبان پر  لفظ نہیں ہوتے لیکن آپ اس وقت مجسسم حالت  دعا میں ہوتے ہیں
آنکھ سے ٹپکنے والا آنسو دعا  ہے ..آسمان کی جانب اٹھی ہوئی نظر دعا  ہے.. جھکی ہوئی نگاہ دعا ہے..چہرے کی مسکراہٹ دعا ہے..  سر پر ٹہرنے والا ہاتھ دعا ہے.. شکر اور شکریے کا اظہار دعا ہے.. وہ جو خالق ہے ہر شے کا ،اسے بھلا لفظوں کی کیا حاجت..لفظوں کی اس کے سامنے بھلا کیا بساط

3 comments:

  1. dua bhi mohbt ke terhan ka ik ehsas hai jo labon per na bhi aye per phir bhi bayan ke ja sakte hai, ankhon mai chamkte howe sitaron se aur dil ke dharkte hoi darkhano se

    ReplyDelete
  2. aankh se tapakne wala aansu duaa hai.. uthi hui nazr duaa hai..jhuki hui nigah duaa hai.. chehrey ki muskurahat duaa hai..sarr pe teherne wala hath duaa hai.. shukr aur shukriyey ka izhar duaa hai..
    woh jo Khaliq hai.. her shay ka..ussay bhala kya hajat lafzon ki

    ReplyDelete