Thursday, June 30, 2011

خوف خواہش سے جنم لیتا ہے اور خواہش دنیا ہے.جب دنیا کو پیچھے ڈال دیا جائے تو خوف بھی ختم ہو جاتا ہے .در اصل جہاں خواہش ہوتی ہے وہیں کہیں دل میں جہاں اس خواہش کے پودے کی جڑیں ہوتی ہیں یہ خوف اس خواہش کے نا تمام رہ جانے کا خوف بھی سر اٹھانے لگتا ہے