Wednesday, December 14, 2011

سچ بولنے سچ لکھنے والے لوگ خود بھی سچے ہوں، ضروری نہیں ہے

6 comments:

  1. "Zuban Se Keh Bhi Diya "LA ILAHA ILALLAH" To Kya Hasil Dil-O-Nigah Musalman Nahin To Kuch Bhi Nahin”

    ReplyDelete
  2. معاف کیجئے گا، بات کچھ بنی نہیں- جو شخص باطن میں سچا نہیں اس سے یہ امید کیسے کی جا سکتی ہے کہ وہ ہمیشہ سچ بولے اور لکھے گا؟ ایسے لوگوں کا سچ اکثر ادھورا ہوتا ہے، مصلحتوں کا مارا ہوا

    ReplyDelete
  3. Brother Sakib Ahmad,

    Insani tareekh munafqoon se bari padi hai. Agarchay munafiq hamaisha such nahi boltay. laikin zahir khushnuma rackhnay ke liay kuch such unki majboori hotay hain.

    ReplyDelete
  4. سچ لکھنے سچ بولنے اور سچا ھونے میں وھی فرق ھے جو سورج اور چاند میں ھے ایک خود روشن ھے اور دوسرے کی روشنی مستعار لی ھوئی ھے

    ReplyDelete
  5. hmmm...zada ter loog DOSRO'N k baray mein sach araam say bool laitay hain...magar jub khud k baray mein sach kehna ho...tu...hmm....

    App key batain Huma Sahiba...hameesha kafi khuch soochnay per majboor ker daity hain....

    Keep thinking and keep sharing...

    ReplyDelete
  6. aur sachha shakhs woh hota hai jo dosorn ke baray mein hi nahin,apne baray mein bhi sach bol sake...

    ReplyDelete