Saturday, February 8, 2014

تو ہم دین کو بھی بہ وقت ضرورت اور بہ قدرِ ضرورت ہی سمجھتے ہیں۔۔۔۔

1 comment:

  1. insaan per her lemha ak naya inkishaf kerta hai, us ki zarorat k hawalay say aur uski baseerat k hawalay say.

    ReplyDelete